Urdu 1st Year Sabaq 12 Dosti ka Phal MCQS Short Questions Long Questions Notes

urdu 11th notes mcqs sabaq 12

1. سانپ سے دوستی کا مشورہ کس نے دیا؟

 
 
 
 

2. دوستی کی پیشکش سن کر سانپ نے کیا کیا؟

 
 
 
 

3. شکاری نے آگ جلا کر کیا کیا؟

 
 
 
 

4. گدھوں کو اپنا دوست بنانے کے بعد کبوتر اور گدھ دوستی کے لیے کس کے پاس گئے؟

 
 
 
 

5. شفیع عقیل کے مطابق پڑوسیوں کا رشتہ کیا ہوتا ہے؟

 
 
 
 

6. سبق دوستی کا پھل‘‘ کس کتاب سے ماخوذ ہے؟

 
 
 
 

7. شکاری نے سانپ کو کہاں دیکھا؟

 
 
 
 

8. کبوتر گدھوں کو ساتھ لے کر پہنچا تو شکاری:

 
 
 
 

9. تیسری بار بھی آگ بجھ گئی تو شکاری نے سوچا

 
 
 
 

10. کبوتری کے ننھے منے بچوں کی حفاظت کون کرتا تھا ؟

 
 
 
 

11. کبوتر نے دوستوں کو بلانے کا ارادہ ظاہر کیا تو کبوتری نے کیا کہا؟

 
 
 
 

12. شکاری کو درخت پر کیا نظر آیا؟

 
 
 
 

13. کبوتری نے گدھوں کے بارے میں کیا کہا؟

 
 
 
 

14. جب کبوتر اور گدھ نے سانپ سے مدد مانگی تو اس نے جواب دیا:

 
 
 
 

15. سانپ کہاں رہتا تھا؟

 
 
 
 

16. شکاری کا کردار علامت ہے:

 
 
 
 

17. کبوتر نے گدھوں کے بارے میں کیا رائے دی؟

 
 
 
 

18. سبق دوستی کا پھل کس زبان سے ترجمہ کیا گیا ہے؟

 
 
 
 

19. شکاری نے خالی ہاتھ گھر جانے سے بچنے کے لیے کیا سوچا؟

 
 
 
 

20. سبق’’دوستی کا پھل‘‘ کے مطابق کبوتر کبوتری کہاں رہتے تھے؟

 
 
 
 

21. کن جانوروں کے درمیان دوستی ہوئی؟

 
 
 
 

22. شکاری رات بھر کیا کرتارہا؟

 
 
 
 

23. کبوتری نے کبوتر کو کیا مشورہ دیا؟

 
 
 
 

24. شکاری کب سے مارا مارا پھر رہا تھا؟

 
 
 
 

25. شکاری نے جنگل میں رات گزاری؟

 
 
 
 

26. شکاری آ کر کہاں کھڑا ہوا؟

 
 
 
 

27. کبوتری کے بچے اتنے چھوٹے تھے کہ:

 
 
 
 

28. سبق’’دوستی کا پھل‘‘ کے مصنف کا کیا نام ہے؟

 
 
 
 

29. کبوتر کو کس بات کی علامت قرار دیا جا تا ہے؟

 
 
 
 

30. شکاری نے کتنی بار آگ جلائی؟

 
 
 
 

31. کبوتر کبوتری آگ بجھانے کے لیے پانی کہاں سے لائے؟

 
 
 
 

32. گدھوں کے جوڑے کے پاس پہنچ کر کبوتر نے کیا کیا؟

 
 
 
 

33. سبق دوستی کا پھل‘‘ کی ادبی صنف ہے

 
 
 
 

34. کوئی دوست بنانے کے مشورے پر کبوتر نے کیا کہا؟

 
 
 
 

35. ”اکیلا جان دار دنیا میں کسی کام کا نہیں ہوتا یہ بات کس نے کی؟

 
 
 
 

36. دوستی کی بات سن کر سانپ نے کیا کہا؟

 
 
 
 

37. سانپ نے کبوتر اور کیوتری کی مدد کیسے کی؟

 
 
 
 

38. گدھ اور سانپ سے دوستی کے بعد :

 
 
 
 

39. سبق’’دوستی کا پھل‘‘ کے مطابق بڑے سے درخت پر کس کا گھونسلا تھا؟

 
 
 
 

40. سانپ سے مدد لینے کی تجویز کس نے دی؟

 
 
 
 

41. آج بھی لوگ دوستی اور امن کے پیغام کے لیے….کو بطور علامت استعمال کرتے ہیں:

 
 
 
 

42. اندھیرے میں درخت پر گھونسلا تلاش کرنے کے لیے شکاری نے کیا کیا ؟

 
 
 
 

43. کبوتری کو کس بات کی فکر رہتی تھی؟

 
 
 
 

44. گدھوں کا جوڑا کہاں رہتا تھا؟

 
 
 
 

45. کبوتر اور کبوتری کیسی زندگی بسر کر رہے تھے؟

 
 
 
 

46. جنگل میں رات گزارنے کے ارادے سے شکاری نے کیا کیا؟

 
 
 
 

47. کبوتر نے آگ بجھانے کے لیے مددمانگی تو گدھ نے کہا؟

 
 
 
 

48. سانپ کو دیکھ کر شکاری نے کیا کیا؟

 
 
 
 

49. کبوتری کے اصرار پر کبوتر دوستی کے لیے سب سے پہلے کس کے پاس گیا؟

 
 
 
 

50. کبوتر ، گدھ اور سانپ میں قدر مشترک کیا تھی؟

 
 
 
 

تفصیلی سوالات

“سیاق و سباق کے حوالے سے تشریح کیجیے۔ مصنف کا نام اور سبق کا عنوان بھی تحریر کیجیے۔

اس طرح کبوتر ، گدھ اور سانپ کی دوستی ہوگئی ۔ اب کبوتری مطمئن تھی کہ وہ اکیلے نہیں رہے ۔ان کے دوسرے ساتھی بھی ہیں ۔ دن گذرتے گئے ۔ کبوتری نے جوانڈے دیے تھے ،اب ان کی جگہ ننھے منے بچوں نے لے لی تھی ۔ کبوتری اور کبوتر دن رات بچوں کی دیکھ بھال اور حفاظت میں لگے رہتے ۔ایک روز ایک شکاری اس طرف آ نکلا۔ وہ صبح سے مارا مارا پھر رہا تھا لیکن کوئی شکار اس کے ہاتھ نہیں لگا تھا۔ وہ اس درخت کے نیچے آ کر کھڑا ہو گیا جس پر کبوتر اور کبوتری نے گھونسلا بنا رکھا تھا۔ اس نے دل میں سوچا۔”
“سیاق و سباق کے حوالے سے تشریح کیجیے۔ مصنف کا نام اور سبق کا عنوان بھی تحریر کیجیے۔

’’ خالی ہاتھ گھر جانا اچھی بات نہ ہوگی ۔ کیوں نہ کسی گھونسلے سے کسی جانور کے بچے ہی پکڑ کے لے چلوں ۔ کچھ تو مل جاۓ گا۔‘‘ اتنا سوچ کر اس نے اردگرد سے درخت کا جائزہ لیا تو اسے اس پر ایک گھونسلا دکھائی دیا۔ گھونسلا دیکھ کر اس نے اپنے تجربے سے اس کا اندازہ بھی کر لیا کہ گھونسلے میں کسی پرندے کے بچے بھی موجود ہیں ۔ اس وقت شام ہونے کو آئی تھی اور آہستہ آہستہ چاروں طرف اندھیرا پھیلنے لگا تھا۔ سید یکھ کر شکاری کے ذہن میں ایک ترکیب آئی ۔اس نے سوچا ۔”
“سیاق و سباق کے حوالے سے تشریح کیجیے۔ مصنف کا نام اور سبق کا عنوان بھی تحریر کیجیے۔

کبوتر گدھوں کے جوڑے کو ساتھ لے کر آیا تو انھوں نے دیکھا کہ آگ پوری طرح جل رہی تھی اور اس کی روشنی میں شکاری درخت پر چڑھ رہا تھا۔ “
“سیاق و سباق کے حوالے سے تشریح کیجیے۔ مصنف کا نام اور سبق کا عنوان بھی تحریر کیجیے۔

اس طرح دیکھتے ہی دیکھتے چندلمحوں میں جلتی ہوئی آگ بجھ گئی۔ یہ دیکھ کر شکاری تلملا کر رہ گیا۔ مصیبت پیتھی کہ اب اندھیرا بہت زیادہ ہو چکا تھا۔ پھر یہ بھی تھا کہ شکاری بار بار درخت پر چڑھنے اتر نے میں تھک چکا تھا۔ اس لیے اس نے دل میں سوچا۔دونوں گدھ کبوتر اور کبوتری کے ساتھ جلدی جلدی دریا پر گئے اور انھوں نے اپنے بڑے بڑے پروں میں پانی بھر کے لا کر آگ پر پھینکنا شروع کر دیا۔”
نصابی سبق ” دوستی کا پھل ” کا خلاصہ لکھئے اور مصنف کا نام بھی تحریر کیجیے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *