2nd Year English Grammar Notes MCQs Solution

english 12th Grammar mcqs

1. You must cut______your expenses.

 
 
 
 

2. His house is adjacent______the mosque.

 
 
 
 

3. Ali will surely side______you.

 
 
 
 

4. I met him______the way.

 
 
 
 

5. Do not interfere______me in my plans.

 
 
 
 

6. He mourned______his only son.

 
 
 
 

7. He takes pride______his knowledge.

 
 
 
 

8. We are still backward industries______

 
 
 
 

9. Do not look down______the poor.

 
 
 
 

10. Hassan differs______you in this matter.

 
 
 
 

11. His eyes were filled______tears.

 
 
 
 

12. The principal was furious______his mistake.

 
 
 
 

13. Beware______pickpockets.

 
 
 
 

14. He objected______his going there.

 
 
 
 

15. This is painful______me.

 
 
 
 

16. He is no match______him.

 
 
 
 

17. I availed myself______the chance.

 
 
 
 

18. At last he recovered______illness.

 
 
 
 

19. He has great command______English.

 
 
 
 

20. Has the mail come______?

 
 
 
 

21. He set______on a journey.

 
 
 
 

22. He does not reflect______his actions.

 
 
 
 

23. You should not hanker______money.

 
 
 
 

24. The Muslims pray______God.

 
 
 
 

25. Everybody is desirous______criticism.

 
 
 
 

26. Nature is not hostile______man.

 
 
 
 

27. He has no hope______success.

 
 
 
 

28. We all have to answer ______our sins.

 
 
 
 

29. People have been deprived______their rights.

 
 
 
 

30. This book is better______that.

 
 
 
 

31. He is married______her.

 
 
 
 

32. I am quite familiar______this place.

 
 
 
 

33. He died______cholera.

 
 
 
 

34. He searched______his lost book.

 
 
 
 

35. She could not get rid______her worries.

 
 
 
 

36. Babies feed______milk.

 
 
 
 

37. I inquired of him______his son’s progress.

 
 
 
 

38. I call______him on every Sunday.

 
 
 
 

39. He is suffering______fever.

 
 
 
 

40. Listen______me carefully.

 
 
 
 

41. She is fit______this job.

 
 
 
 

42. He is lame______one leg.

 
 
 
 

43. Always act______your parent’s advice.

 
 
 
 

44. He met______an accident.

 
 
 
 

45. Take care______your health.

 
 
 
 

46. I shall pray______God.

 
 
 
 

47. Always take pity______the poor orphan.

 
 
 
 

48. He is too proud______work

 
 
 
 

49. He is suffering______fever.

 
 
 
 

50. Cholera has broken______in the city.

 
 
 
 

51. All were alarmed______the news.

 
 
 
 

52. My uncle congratulated me______my success

 
 
 
 

53. I am weary______this idle talk.

 
 
 
 

54. My friend acceded______my request.

 
 
 
 

55. Charity begins______home.

 
 
 
 

56. Ali was cured______malaria.

 
 
 
 

57. He is famous______his bravery.

 
 
 
 

58. Ali repented______for his past conduct.

 
 
 
 

59. I met him______chance.

 
 
 
 

60. Sewage is carried______pipeline.

 
 
 
 

61. He write______blue ink.

 
 
 
 

62. She rejoiced______her success.

 
 
 
 

63. Forgive me______what I have done.

 
 
 
 

64. I am familiar______the facts.

 
 
 
 

65. What will become______him?

 
 
 
 

66. Farah has invited me______tea.

 
 
 
 

67. He is blind______one eye.

 
 
 
 

68. She is engaged______writing a novel.

 
 
 
 

69. lam vexed______him.

 
 
 
 

70. She was shocked______the dreadful news.

 
 
 
 

71. This tree is laden______fruit.

 
 
 
 

72. May I come______Sir?

 
 
 
 

73. He is ill______fever.

 
 
 
 

74. Do not boast______your riches.

 
 
 
 

75. I assure you______my assistance.

 
 
 
 

76. He is proficient______English.

 
 
 
 

77. He devoted his life______the service of country.

 
 
 
 

78. They agreed______my proposal.

 
 
 
 

79. She is vain______her curly locks.

 
 
 
 

80. You are wanting______common sense.

 
 
 
 

81. He was moved______tears by her sad plight.

 
 
 
 

82. The child was dressed______red.

 
 
 
 

83. She takes______her mother.

 
 
 
 

84. She is well qualified______this post.

 
 
 
 

85. His boss was angry______him.

 
 
 
 

86. He applied______manager for leave.

 
 
 
 

87. The rainy season has set______

 
 
 
 

88. A prize was awarded______him.

 
 
 
 

89. A good judge never jumps______the conclusion.

 
 
 
 

90. The doctor operated______the patient.

 
 
 
 

91. Come______my house.

 
 
 
 

92. Everybody yearns______sympathy.

 
 
 
 

93. You should appeal______the president for mercy.

 
 
 
 

94. He is ignorant______the laws of nature.

 
 
 
 

95. The girl parted______her parents.

 
 
 
 

96. He is ill______fever.

 
 
 
 

97. You are incapable______doing such a thing.

 
 
 
 

98. I agree______your proposal.

 
 
 
 

99. My uncle congratulated me______my success.

 
 
 
 

100. He is void______wisdom.

 
 
 
 

101. The Muslims fought______their dependence.

 
 
 
 

102. She is good______dancing and singing.

 
 
 
 

103. I stand______injustice.

 
 
 
 

104. She takes______her sister.

 
 
 
 

105. The boy is negligent______work.

 
 
 
 

Essays

1. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: A Birthday Ceremony
2. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: A Cricket Match
3. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: A House on Fire
4. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: A Morning Walk Essay
5. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: A Picnic Party
6. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: A Rainy Day
7. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: A Road Accident
8. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: A Thing of Beauty is a Joy for Ever
9. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: A Visit to a Big City
10. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: A Visit to a Hill Station
11. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: A Visit to a Zoo
12. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: A Visit to Fair
13. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: A Visit to Historical Place
14. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Advantages of Sports 
15. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Allama Iqbal
16. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: An Ideal Student
17. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: An Ideal Teacher
18. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Atomic Energy
19. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Best Technical Education
20. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Blessing of Science
21. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Causes and Effects of Pollution On Environment Essay
22. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Child Labour
23. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Co-Education
24. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Computer Advantages and Disadvantages Essay
25. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Computer and Modern World
26. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Corruption in Pakistan
27. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: COVID-19 pandemic in Pakistan
28. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Cricket Match
29. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Democracy in Pakistan
30. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Destruction of a Flood
31. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Dignity of Work
32. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Discipline
33. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Election in Pakistan
34. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Examinations
35. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Fashion – Advantages and Disadvantages
36. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Hobbies
37. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Honesty
38. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Horrors of War
39. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Hostel Life
40. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Illiteracy Problem
41. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Importance of CPEC
42. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Importance of Education in Life
43. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Inflation
44. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Information Technology
45. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Internet Advantages and Disadvantages
46. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Justice Delay is Justice Denied
47. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Kashmir Issue
48. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Life in a Big City
49. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Life Today is Better than the Past
50. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Mobile Phone Advantages and Disadvantages
51. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: My Aim In Life
52. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: My Aim in Life to Become a Teacher
53. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: My Best Friend
54. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: My favorite Personality
55. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: My Favourite Book
56. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: My Favourite Game
57. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: My Favourite Pastime
58. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: My First Day at College
59. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: My First Day At College or School
60. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: My Future Dream
61. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: My Hero in History
62. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: My Hobby
63. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: My Idea of Happy Life
64. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: My Last Day at College
65. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Our Education System 
66. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Our Festivals
67. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Over Population
68. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Patriotism
69. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Picnic Party
70. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Place of Women in Society
71. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Pleasures of College Life
72. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Political System of Pakistan
73. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Pollution
74. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Population Explosion
75. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Prize Distribution Ceremony Essay
76. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Qaid-e-Azam Muhammad Ali Jinnah
77. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Responsibilities of Youth
78. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Rising of Prices Essay
79. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Rising Prices
80. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Road Accident
81. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Role of Media
82. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Science and Our Life
83. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Science and Technology
84. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Smuggling
85. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Sports and Games
86. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Students and Politics
87. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Superstitions
88. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Technical Education
89. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Television
90. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Terrorism in Pakistan
91. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: The Happiest Day of my Life
92. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: The Holly Quran
93. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: The Importance of English Language
94. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: The Journey of Train
95. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Traveling
96. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Unemployment
97. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Use and Abuse of Mobile Phones
98. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Uses of Science
99. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Village Life
100. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Why I love Pakistan
101. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Women Place in Society
102. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Women’s Education
103. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Women’s place in Pakistan
104. Write an essay (300 – 400 words) on the topic: Wonders of Science

Idioms

“1. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) A bed of thorns (ii) A bee in bonnet (iii) A bird’s eye view (iv) A black sheep (v) A blessing in disguise”
“2. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) A blind alley (ii) A blue eyed boy (iii) A blue stocking (iv) A bolt from the blue (v) A bone of contention”
“3. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) A bone of contention  (ii) A broken reed (iii) A bull in china shop (iv) A burning question  (v) A cat’s paw”
“4. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) A cat’s-paw (ii) A child’s play (iii) A close-fisted man (iv) A dark horse (v) A dead end”
“5. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) A dead letter (ii) A dog in the manger (iii) A drawn game (iv) A fair play (v) A fair weather friend”
“6. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) A feather in one’s cap (ii) A fish out of water (iii) A fishy story (iv) A gala day (v) A hair breadth escape”
“7. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) A hard and fast rule (ii) A leap in the lock (iii) A live wire (iv) A maiden speech (v) A man of his words”
“8. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) A man of iron will (ii) A man of letters (iii) A man of parts (iv) A narrow escape (v) A near miss”
“9. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) A necessary evil (ii) A rainy day (iii) A red letter day (iv) A rolling stone (v) A rotten egg”
“10. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) A royal road (ii) A slip of tongue (iii) A wet blanket (iv) A white elephant (v) A wild goose chase”
“11. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) A wild goose chase  (ii) Above board (iii) Add fuel to fire (iv) Add insult to injury (v) All alone “
“12. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) All and sundry (ii) All at sea (iii) All ears (iv) All in all (v) All moonshine”
“13. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) All of a sudden (ii) All the same  (iii) Alpha and omega (iv) An apple of discord (v) An axe to grind”
“14. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) An eye wash (ii) An oily tongue (iii) An open secret (iv) Apple of one’s eyes (v) Apple-pie order”
“15. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Around the clock (ii) As a matter of fact (iii) As cool as a cucumber (iv) At (someone’s) beck and call (v) At a loss “
“16. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) At a stone’s throw (ii) At a stretch (iii) At any cost (iv) At cross-purposes (v) At dagger’s drawn”
“17. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) At eleventh hour (ii) At hand (iii) At home in (iv) At large (v) At length”
“18. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) At logger heads (ii) At one’s back and call (iii) At one’s wit’s end (iv) At sixes and sevens  (v) At stake”
“19. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) At the eleventh hour  (ii) Back out (iii) Bad blood (iv) Bag and baggage (v) Bank on someone/something”
“20. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Be at large (ii) Be at loose end (iii) Be living in foul’s paradise (iv) Bear fruit (v) Bear out”
“21. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Bear the brunt of (ii) Bear the palm (iii) Beat about the bush (iv) Bed of roses (v) Before long”
“22. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Bell the cat (ii) Beside oneself (iii) Better half (iv) Between the devil and the deep blue sea (v) Between two fires”
“23. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Bitter pill to swallow (ii) Black out (iii) Black sheep  (iv) Blessing in disguise (v) Blow hot and cold”
“24. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Blue blood (ii) Born with a silver spoon in one’s mouth (iii) Bread and butter (iv) Break away (v) Break down”
“25. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Break in (ii) Break into (iii) Break out (iv) Break the ice (v) Break the news”
“26. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Break up (ii) Break with (iii) Bring about (iv) Bring home (v) Bring in”
“27. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Bring into question (ii) Bring to book (iii) Bring to light (iv) Bring up (v) Broken reed”
“28. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Build castles in the air/in Spain (ii) Burn midnight oil (iii) Burn one’s fingers (iv) Burn the candle at both ends (v) Burn the midnight oil”
“29. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Burning question (ii) Burst into tears (iii) Bury the hatchet (iv) Butter (someone) up (v) By all means”
“30. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) By and by (ii) By and large (iii) By dint of (iv) By fits and starts (v) By hook or by crook “
“31. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) By leaps and bounds (ii) By virtue of (something) (iii) Call for (iv) Call in (v) Call into question”
“32. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Call off (ii) Call on (someone) (iii) Capital punishment (iv) Carry out (v) Carry the day”
“33. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Carry weight (ii) Cast a spell (iii) Cast down (iv) Cast pearls before swine (v) Casting vote”
“34. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Catch (someone) red-handed (ii) Cats and dogs life (iii) Cheek by jowl (iv) Child’s play (v) Close shave”
“35. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Cock and bull story (ii) Cold blood (iii) Cold comfort (iv) Come by (v) Come down hard on (someone)”
“36. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Come into play (ii) Come of (iii) Come of age (iv) Come off (v) Come out”
“37. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Come round (ii) Come to (iii) Come to blows (iv) Come to grief (v) Come to terms with (someone/something)”
“38. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Crocodile tears (ii) Crux of the matter (iii) Cry for the moon (iv) Cry wolf (v) Cut a sorry figure”
“39. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Cut down (ii) Cut off (iii) Dark horse (iv) Dawn on someone (v) Day in and day out “
“40. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Deal in (ii) Deliver the goods (iii) Die down (iv) Die in harness (v) Do away with”
“41. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Down and out (ii) Down to Earth (iii) Draw a line between (iv) Eat a humble pie (v) Eat one’s cake and have it too”
“42. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Eat one’s words (ii) Ebb and flow (iii) Egg (someone) on (iv) Eke out (a living) (v) End in smoke”
“43. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) End up (ii) Every inch (iii) Eye opening (iv) Face the music (v) Face to face”
“44. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Fair play (ii) Fair sex (iii) Fair-weather friend (iv) Fall a prey to (v) Fall back on”
“45. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Fall back upon (ii) Fall head over heels in love with (iii) Fall in with (iv) Fall off (v) Fall out”
“46. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Fall short of (ii) Far cry from (something) (iii) Feast one’s eyes on (someone/something) (iv) Feather in one’s cap (v) Feather in one’s nest”
“47. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Feather one’s nest (ii) Fed up with (iii) Feel sorry for (someone) (iv) Feel the pulse (v) Few and far between”
“48. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Find fault with (ii) Finger in the pie (iii) First and foremost (iv) Fish in troubled waters (v) Flesh and blood”
“49. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Fly in the ointment (ii) Follow in (someone’s) footsteps/tracks (iii) Follow one’s heart (iv) Follow suit (v) For good”
“50. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) For the sake of (ii) For want of (iii) French leave (iv) From hand to mouth (v) From scratch”
“51. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Get along with (ii) Get better of (iii) Get over (iv) Get rid of (v) Get the better of (someone)”
“52. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Get through (ii) Get up (iii) Get wind of (iv) Get-up-and-go (v) Gift of the gab”
“53. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Give and take (ii) Give away (iii) Give in (iv) Give the cold shoulder (v) Give the devil his due”
“54. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Give up (ii) Go around (iii) Go back on (iv) Go by (v) Go hand in hand “
“55. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Go off (ii) Go through (iii) Go to pieces (iv) Go to rack and ruin (v) Go to the dog”
“56. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Go to the dogs (ii) Go without saying (iii) Good for nothing (iv) Hale and hearty (v) Hand in glove”
“57. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Hand in glove with (ii) Hang around (iii) Hard and fast (iv) Hard nut to crack (v) Hard up”
“58. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Harp on (something) (ii) Have clean hands (iii) Have nothing to do with (someone/something) (iv) Heart and soul (v) Here and there”
“59. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Hide/bury one’s head in sand (ii) High time (iii) Hit (someone) below the belt (iv) Hit on (v) Hobson’s choice”
“60. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Hold a brief (ii) Hold one’s head up (iii) Hold water (iv) Hope against hope (v) House of cards”
“61. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Hue and cry (ii) Ill at ease (iii) In a fix (iv) In a nutshell (v) In all”
“62. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) In black and white  (ii) In cold blood (iii) In full swing (iv) In hot water (v) In keeping with”
“63. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) In letter and spirit (ii) In short (iii) In the air (iv) In the nick of time (v) In the pink”
“64. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) In the pipeline (ii) In the same boat (iii) In the teeth of (iv) Ins and outs of (v) It is high time”
“65. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Jack of all trades (ii) Jail bird (iii) Keep abreast of (iv) Keep body and soul together (v) Keep from”
“66. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Keep one’s word (ii) Keep pace with (iii) Keep the wolf from the door (iv) Keep up appearances (v) Keep up with”
“67. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Keeping with (ii) Kick the bucket (iii) Kill time (iv) Kith and kin (v) Knit one’s brows”
“68. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Lame excuses (ii) Last straw (iii) Laugh up in your sleeve (iv) Laughing stock (v) Lay by”
“69. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Lead (someone) by the nose (ii) Lead a dog’s life (iii) Lead somebody astray (iv) Leave in the lurch (v) Leave no stone unturned”
“70. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Lend an ear (ii) Let bygones be bygones (iii) Let down (iv) Let in (v) Let someone down”
“71. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Let the cat out of the bag (ii) Lion share (iii) Lion’s share (iv) Live by one’s wits (v) Live from hand to mouth”
“72. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Lock, stock and barrel (ii) Long and short (iii) Look after (iv) Look ahead (v) Look down upon”
“73. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Look for (ii) Look forward to (iii) Look into (iv) Look sharp (v) Lose ground”
“74. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Lose heart (ii) Lose one’s temper (iii) Loud mouth (iv) Maiden speech (v) Maiden voyage”
“75. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Make a clean breast of (something) (ii) Make a face (at someone) (iii) Make amends (iv) Make amends for (something) (v) Make away with”
“76. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Make both ends meet (ii) Make fun of (iii) Make good (iv) Make headway (v) Make light of something”
“77. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Make one’s mark (ii) Make the best of it (iii) Make the most of it (iv) Make up (v) Make up one’s mind”
“78. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Mend one’s way (ii) Mind one’s business (iii) Mind one’s own business (iv) Miss the boat/bus (v) More or less”
“79. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Move heaven and Earth (ii) Muster up courage (iii) Nail in (someone’s) coffin (iv) Neck or nothing (v) Next to nothing”
“80. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Nip in the bud (ii) Now and then (iii) Null and void (iv) Odds and ends (v) Of one’s own accord”
“81. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Off and on/on and off (ii) Off colour (iii) Off hands (iv) Offhand (v) On the eve of”
“82. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) On the horns of a dilemma (ii) On the verge of (iii) On the whole (iv) Once and for all (v) Once in a blue moon”
“83. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Out-and-out (ii) Part and parcel (iii) Pass away (iv) Pay lip service (v) Play one’s trump card”
“84. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Play second fiddle to (someone) (ii) Play truant (iii) Play with fire (iv) Poke one’s nose into something (v) Pros and cons”
“85. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Pull (someone’s) legs (ii) Put by (iii) Put down (iv) Put off (v) Put on”
“86. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Put out (ii) Put the cart before the horse (iii) Put up with (iv) Rank and file (v) Read a lecture”
“87. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Read between the lines (ii) Read cover to cover (iii) Red tape (iv) Rest on one’s laurels (v) Run against”
“88. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Run down (ii) Run over (iii) Run short of (iv) Say (something) to (someone’s) face (v) Scot-free”
“89. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) See eye to eye (with someone) (ii) See off (iii) See through (iv) Send for (v) Set aside”
“90. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Set by (ii) Set in (iii) Set in motion (iv) Set off (v) Set out”
“91. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Set up (ii) Smell a rat (iii) Snail’s pace (iv) Snake in the grass (v) Spick-and-span”
“92. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Split hairs (ii) Spread like wildfire (iii) Square meal (iv) Square peg in a round hole (v) Stand by”
“93. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Stand one’s ground (ii) Storm in a teacup (iii) Sum and substance (iv) Take after (v) Take down”
“94. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Take into account (ii) Take to (iii) Talk shop (iv) Tell upon (v) Then and there”
“95. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Through thick and thin (ii) Time and again (iii) To abide by (iv) To back out (v) To bank on “
“96. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To be at one’s beck and call (ii) To be hard up (iii) To be taken aback (iv) To be under the cloud  (v) To beat about the bush”
“97. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To beg for  (ii) To blow hot and cold (iii) To blow one’s own horn/trumpet (iv) To break the ice  (v) To break the news “
“98. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To break up (ii) To bring home to (iii) To bring out (iv) To bring to book (v) To bring to light “
“99. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To bring up  (ii) To burn one’s finger (iii) To call a spade a spade (iv) To call names (v) To call off “
“100. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To call on (ii) To cast a spell (iii) To catch red-handed (iv) To come across (v) To come to blows”
“101. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To come to light (ii) To cry over spilt milk  (iii) To cut at (iv) To cut to the quick (v) To eat one’s word”
“102. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To face the music  (ii) To fall flat (iii) To fall out  (iv) To fall to the ground (v) To feel like a fish out of water”
“103. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To fight with one’s back to the wall (ii) To flog a dead horse (iii) To furnish with (iv) To get across  (v) To get in”
“104. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To get into hot water (ii) To get over  (iii) To get rid of  (iv) To gird up one’s loins (v) To give in “
“105. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To give up  (ii) To give vent to (iii) To go off (iv) To go through  (v) To grease the palm”
“106. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To hit/strike while the iron is hot (ii) To hold water (iii) To keep pace with  (iv) To keep up (v) To kick up a row “
“107. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To leave in the lurch (ii) To leave no stone unturned (iii) To let down  (iv) To let off  (v) To lick the dust”
“108. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To live from hand to mouth (ii) To look after  (iii) To look for  (iv) To make fun of (v) To make headway”
“109. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To make off with (ii) To make off  (iii) To make room for (iv) To make the fun of  (v) To make the most of”
“110. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To make up for (ii) To nip in the bud  (iii) To pass on (iv) To pay back in the same coin (v) To pay through nose”
“111. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To poke one’s nose into (ii) To put into practice (iii) To round up (iv) To run after (v) To run into “
“112. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To run short of (ii) To save something for the rainy day  (iii) To shed crocodile terars  (iv) To sit on the fence (v) To speak volumes “
“113. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To stand on ceremony (ii) To stir up  (iii) To take (someone) by surprise (iv) To take (something) to heart (v) To take a fancy to”
“114. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To take for granted (ii) To take heart (iii) To take off (iv) To take place  (v) To take the bull by the horns”
“115. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To take to one’s heels (ii) To take to task (iii) To turn down (iv) To turn over a new leaf  (v) To turn the tables “
“116. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) To watch over (ii) To wind up (iii) To work out (iv) True to one’s word (v) Turn a deaf ear”
“117. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Turn one’s back on (someone/something) (ii) Turn over a new leaf (iii) Turn the tables on (someone) (iv) Turn turtle (v) Turn up”
“118. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Under a cloud (ii) Under one’s nose  (iii) Up to the mark (iv) Ups and downs (v) Wait for a raindrop in the drought”
“119. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Walking on broken glass (ii) Weal and woe (iii) Wear and tear (iv) White lie (v) With a grain of salt”
“120. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) With a heavy heart (ii) With a high hand (iii) With a view to (iv) With all one’s heart and soul (v) With an iron hand”
“121. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) With flying colours (ii) With open arms (iii) Without fail (iv) Wolf in sheep’s clothing (v) Work wonders”
“122. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) X factor (ii) X marks the spot (iii) Yeoman’s service (iv) Yes-man (v) Young Turk”
“123. Use the following idioms and phrasal verbs in sentences of your own:
(i) Zeal and zest (ii) Zero hour (iii) Zero tolerance (iv) Zip your lip (v) Up to the mark”

Paragraph Translation Urdu to English

“1. Translate the following passage into English:
 ایک مورخ اپنے عہد کی سچی اور مکمل تصویر پیش کرتا ہے۔ وہ کوئی جھوٹی بات نہیں لکھتا اور وہ کسی بات کو دہراتا نہیں۔ وہ کسی کے خلاف تعصب نہیں رکھتا ۔ کبھی کبھی دو اچھے مورخ ایک دوسرے سے اتفاق نہیں کرتے۔ وہ ایک ہی منظر دیکھتے ہیں اور مختلف داستانیں بیان کرتے ہیں۔ وجہ یہ ہے کہ مورخ بھی انسان ہوتے ہیں مشینیں نہیں۔ انسان ایک دوسرے سے مختلف ہوتے ہیں  اور چیزوں کو مختلف زاویوں سے دیکھتے ہیں۔ اس لیے مورخ کی شخصیت اس کی تحریر سے غیر حاضرنہیں  ہوتی ہے۔”
“2. Translate the following passage into English:
 آبادی میں اضافے کی بڑی وجہ یہ ہے کہ ان لوگوں کی تعداد جو کسی سال میں پیدا ہوئے ہیں زیادہ ہے اس تعداد سے جو مرتے ہیں یعنی شرح پیدائش اور شرح اموات کے درمیان فرق بڑا واضح ہے۔ مغربی اقوام میں شرح اموات میں کمی کے ایک عرصہ بعد شرح پیدائش میں بھی کمی کر دی گئی ہے تاکہ اب آبادی زیادہ تیزی سے نہ بڑھتی رہے۔”
“3. Translate the following passage into English:
 کھیل انسانی زندگی میں بہت اہمیت رکھتے ہیں۔ یہ انسان کے لیے تفریح، صحت اور خوشی کا سبب ہیں۔ اس دنیا میں حقیقی خوشی نا پید ہے۔ انسان اکژ پریشانیوں میں الجھا رہتا ہے۔ ایسی صورت حال میں کھیل تریاق کا کام دیتے ہیں ۔ اس کی پریشانیاں عارضی طور پر ختم ہو جاتی ہیں۔ کھیل صحت مند رہنے کا حقیقی زریعہ ہیں۔”
“4. Translate the following passage into English:
 میں اپنے ملک سے بہت محبت کرتا ہوں۔ اس میں چار موسم پائے جاتے ہیں۔ اس میں میدان، پہاڑ، سمندر اور دریا سب موجود ہیں۔ اس میں کشمیر جیسی خوبصورت وادی بھی ہے۔  اس میں روہی جیسا صحرا بھی  آتا ہے۔ پاکستان کی ان خوبیوں کی وجہ سے بہت سے لوگ  باہر سے یہاں پر تفریح کے لیے بھی آتے ہیں ۔ اگر ہم سیاحوں کو مزید سہولیات فراہم کریں  تو پاکستان زرِ مبادلہ بھی کما سکتا ہے۔”
“5. Translate the following passage into English:
اِس وقت پاکستان بہت سے ملکی اور بین الا قوامی مسائل میں گھرا ہوا ہے۔ ہمارے دشمن دن رات ہمیں نقصان پہنچانے کے چکر میں ہیں۔ ہم سب بخوبی اس سے آگاہ ہیں۔ ملت اسلامیہ کا دشمن شاطر اور چالاک ہے۔ ان تمام مشکلات سے نکلنے کے لیے ہمیں ایک مخلص اور دیانت دار رہبر کی ضرورت ہے۔ جو ہمیں تباہی اور اذیت کے عالم سے نکا ل سکے۔ ہمیں اپنے شاندار ماضی سے سبق سیکھنے کی ضرورت ہے۔”
“6. Translate the following passage into English:
اب پاکستان جیسے ملکوں کے لئے ضروری ہو گیا ہے کہ وہ جوہری توانائی کا آزادانہ وسیع طور پر استعمال کریں۔ جوہری توانائی کا پُرامن مقاصد کے لئے استعمال ہر قوم کا حق ہے۔ فرانس، جرمنی اور جاپان جیسے ترقی یافتہ ممالک اس کے ذریعے بجلی پیدا کرتے ہیں اور اپنی ترقی کے لئے اس کا استعمال سمندری اور خلائی تحقیق، زیرزمین معدنیات کی تلاش اور بیماریوں کے علاج وغیرہ کے لئے کرتے ہیں۔ سائنسدانوں کو جوہری توانائی کے جدید استعمال کی پوری کوشش سے تحقیق کرنی چاہیے اور حکومت کو ان سائنسدانوں کی حوصلہ افزائی کرنی چاہیے۔”
“7. Translate the following passage into English:
اب مسئلہ کشمیر دنیا کے اہم ترین مسائل میں سے ایک بن چکا ہے۔ حکومت پاکستان کو اس صورتحال سے فائده اٹھانا چاہیے اسے دوسرے  ممالک میں وفود بھیج کر اس مسئلے کو اجاگر کرنا چاہے۔ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حققق کی خلاف ورزی سے دنیا کو آگاه کرنا چاہیے ۔ ہر بین الاقوامی فورم پر ٹھوس دلائل کی بنیاد پر اس مسئلے کو زیر بحث لا نا چاہیے ۔ انسانی حقوق کی نتظیموں سے کہا جائے کہ وه خود صورت  حال کا مشاہد ه کریں ۔ مجھے یقین ہے کہ اگر ہم سنجیده اور مخلص ہیں تو یہ مسئلہ مستقبل قریب میں ھل ہو جائے گا”
“8. Translate the following passage into English:
اتفاق میں برکت ہے۔ یہ ایک سنہری اصول ہے۔ یہ کسی بھی قوم کی ترقی کیلئے ضروری ہے کیونکہ کسی قوم کی قوت کا راز اس کے افراد میں مضمر ہے۔ ہر پاکستانی کو چاہیے کہ وہ خود کو ایک عظیم مملکت کا اچھا شہری ثابت کرے۔ قائد اعظم نے اپنی تقاریر میں طلباء کو نصیحت کی کہ وہ نظم و ضبط کو اپنا شعار بنائیں۔ خود کو تعلیم سے آراستہ کرنے میں دن رات ایک کر دیں۔ اس طرح ایک طرف وہ اپنے اساتذہ اور والدین کی نیک نامی کا باعث ہوں گے تو دوسری طرف ملک کو پیش آنے والے مسائل سے عہدہ براء ہو سکیں گے۔”
“9. Translate the following passage into English:
انسان جب بولنا سیکھتا ہے تو سب سے پہلے لفظ ماں بولتا ہے۔ یہ لفظ زبان کو میٹھا بنا دیتا ہے۔ یہ لفظ ہمارے احساسات کو خوبصورت بنا دیتا ہے۔ جب انسان مصیبتوں میں پھنس جاتا ہے تو ماں اس کے لیے دامن پناہ ہے۔ ماں مایوسی میں روشنی کی کرن اور مصیبتوں میں ڈھال بن جاتی ہے۔ ماں کی دعائیں انسان کی حفاظت کرتی ہیں۔”
“10. Translate the following passage into English:
انسان کی قسمت خود اس کے اپنے ہاتھہ میں ہے۔ وہ اسے اچھا بھی بنا سکتا ہے اور بُرا بھی۔ انسان اپنی محنت سے زندگی میں بلند مقام حاصل کر سکتا ہے۔ بعض دفعہ وہ اپنی کسی کوشش میں ناکام ہو جاتا ہے لیکن زندگی میں کامیابی اور ناکامی ساتھ ساتھ چلتی رہتی ہیں۔ جہاں کامیابی ہمیں خوشی دیتی ہے وہاں ناکامی بھی درس دیتی ہے۔ ہمیں محنت کرنی چاہیے۔ اللہ محنت کا صلہ ضرور دیتاہے۔”
“11. Translate the following passage into English:
ایک استاد معاشرے کا سب سے اہم اور مفید رُکن ہوتا ہے۔ وہ اُن افراد کو رہنمائی فراہم کرتا ہے جنہوں نے کچھ سالوں کے بعد ملک و قوم کے فرائض سنبھالنا ہوتے ہیں۔ اس طرح سے وہ معاشرے کی بنیادوں کو آنے والے وقت کے لیے مضبوط کرتا ہے۔ لہذا ضرورت اس امر کی ہے کہ استاد کا تقرر انتہائی احتیاط سے کیا جائے اور اس بہتر حالات مہیا کیے جائیں۔”
“12. Translate the following passage into English:
ایک آدمی کی گائے تھی اور وہ اُس کے دودھ میں پانی ملاتا تھا۔ گائے سیلاب کی زد میں آ کر ڈوب گئی۔ اِس کا مالک نہائت غمگین ہو کر بیٹھ گیا۔ اُس کے بیٹے نے کہا “اے باپ غم نہ کر۔ وہ پانی جو ہم دودھ میں ملاتے تھے جمع ہو کر سیلاب بن گیا اور اُس نے گائےکوغرق کر دیا۔ “”
“13. Translate the following passage into English:
ایک دفعہ اکبر بادشاہ شکار کو گیا۔ وہاں اُس نے ایک شیر دیکھا۔ اُس نے شکاریوں کو اُس کا پیچھا کرنے کا حکم دیا۔ شیر گھنی جھاڑیوں میں چھُپ گیا۔ شکاری اِدھر اُدھر پھرتے رہے اور ناکام لوٹے۔ بادشاہ گھوڑے سے اُترا۔ بندوق بھری اور جنگل میں داخل ہو گیا۔ کافی فاصلے پر اُس نے دو چمکتی آنکھیں دیکھیں۔ اُن پر نشانہ باندھا اور گولی چلا دی۔ شیر گرجا اور ٹھنڈا ہو گیا۔ شکاریوں نے بادشاہ کو داد دی۔”
“14. Translate the following passage into English:
ایک دن ہمارے پیارے نبی ﷺ ایک درخت کے نیچے اکیلے لیٹے آرام فرما رہے تھے۔ اچانک ایک دشمن جس کے ہاتھ میں تلوار تھی اُدھر آنکلا۔ وہ خاموشی سے آگے بڑھا اور للکار کر کہا ” بتائیے آپﷺ کو میرے ہاتھ سے کون بچائے گا؟” حضور ﷺ مسکرا ئے اور فرمایا “میرا اللہ۔” دشمن خوف سے کانپنے لگا۔ گھبراہٹ میں تلوار ہاتھ سے گر گئی۔ آپ ﷺ نے تلوار اٹھالی اور فرمایا “مجھے میرے رب نے بچا لیا اب تجھے کون بچائے گا؟” کافر نے خوف سے تھر تھراتے ہوئے ہو ئے کہا “تلوار آپﷺ کے ہاتھ میں ہےآپ ﷺ چاہیں تو مجھے بچا سکتے ہیں۔” رسول خدا ﷺ نے فرمایا “غلط کہتے ہو جس خدا نے مجھے تیرے ہاتھوں سے بچایا تجھے کیوں نہیں بچا سکتا۔””
“15. Translate the following passage into English:
ایک غریب آدمی مجبور ہو کر بھیک مانگنے لگا۔ اس کے دوست نے مشورہ دیا کہ آپ فلاں دولت مند کے پاس جائیں تو وہ آپ کی پوری مدد کرے گا۔ چنانچہ ایک دن صبح سویرے وہ اس کے دروازے پر جا پہنچا۔ کیا دیکھتا ہے کہ وہ ہاتھ پھیلائے بڑے عاجزانہ طریقے سے دعا مانگ رہا ہے۔ چند منٹ کھڑا اسے بغور دیکھتا رہا۔ یک لخت اسے خیال آیا کہ ایسے شخص سے مانگنے کا کیا فائدہ۔ مجھے بھی خُدا سے ہی مانگنا چاہیے جس سے یہ مانگ رہا ہے۔ وہ اُلٹے پاؤں گھر لوٹ آیا۔ اُس کے اللہ نے جلد ہی اسے مفلسی سے نجات دے دی۔”
“16. Translate the following passage into English:
ایک مؤرخ اپنے عہد کی سچی اور مکمل تصویر پیش کرتا ہے۔ وہ کوئی جھوٹی بات نہیں لکھتا ۔وہ کسی بات کو دہراتا نہیں۔ وہ کسی کے خلاف تعصّب نہیں رکھتا۔ کبھی کبھی دو اچھے مؤرخ ایک دوسرے سے اتفاق نہیں کرتے۔ وہ ایک ہی منظر دیکھتے ہیں اور مختلف داستانیں بیان کرتے ہیں۔ وجہ یہ ہے کہ مؤرخ بھی انسان ہوتے ہیں مشینیں نہیں۔ انسان ایک دوسرے سے مختلف ہوتے ہیں اور چیزوں کو مختلف زاویوں سے دیکھتے ہیں۔ اس لیے مؤرخ کی شخصیت اس کی تحریر سے غیر حاضر نہیں ہوتی۔”
“17. Translate the following passage into English:
آپ میں سے کوئی ایسا نہیں ہے جس نے چین کا نام نہ سُنا ہو۔ یہ وہی مُلک ہے جس کی دیوار چین بہت مشہور ہے۔ چین پاکستان کا دوست ہے۔ یہ دنیا کا سب سے پرانا اور بڑا ملک ہے۔ جس کی آبادی ایک ارب ہے۔ چین میں تین کروڑ مسلمان آباد ہیں۔ اِس کا صدر مقام بیجنگ ہے جو بہت بڑا اور خوبصورت شہر ہے۔ بیجنگ میں بڑے بڑے کارخانے، سکول، کالج، عالیشان عمارتیں اور سڑکیں ہیں۔ چین کی بڑی اور مشہور بندر گاہ شنگھائی ہے جہاں دور د راز سے بڑے بڑے جہاز آتے ہیں۔”
“18. Translate the following passage into English:
آج کل ہم سائنسی دور میں رہ رہے ہیں۔ دنیا کا ہر ملک سائنسی میدان میں ترقی کرنے کی آرزو رکھتا ہے۔ انسان کو چاہیے کہ سائنس کو مثبت مقاصد کے لیے استعمال کرے۔ لیکن انسان نے اس کی مدد سے بہت ہولناک اور تباہ کن ہتھیار بنا لیے ہیں۔ درحقیقت ہر ملک چاہتا ہے کہ اس کے پاس جدید ترین دفاعی ہتھیار ہوں۔”
“19. Translate the following passage into English:
آج کے دور میں جنگلات کی اہمیت بہت زیادہ ہے۔ یہ آب و ہواکو خوشگوار بناتے ہیں۔ یہ موسم کی شدت کو کم کرتے ہیں۔ یہ آندھیوں سیلابوں اور سیم و تھور کو روکتے ہیں۔ بارش کا سبب بنتے ہیں۔ برف کو جلد پگھلنے سے روکتے ہیں۔ زمین کی زرخیزی کو بڑھاتے ہیں۔ جنگلات ملک کی معاشی ترقی میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔”
“20. Translate the following passage into English:
آزادی مفت میں ہاتھ نہیں آتی اس کے لیے لڑنا پڑتا ہے۔ کوئی کسی کے لیے نہیں لڑتا ہر یک کو اپنی لڑائی خود لڑنی پڑتی ہے۔ پاکستان کی خارجہ پالیسی میں گہری اخلاقی اقدار مضمر ہیں۔ اس کی بنیاد میں یہ شعور کارفرما ہے کہ سب قومیں آپس میں برابر ہیں اور ہر قوم کو حق حاصل ہے کہ اس کی حکومت اس کے اپنے ہاتھ میں ہو اور اس کے اپنے نصب العین کے مطابق ہو ۔ پاکستان کی خارجہ پالیسی کے بڑے مقاصد سلامتی اور ترقی ہیں۔”
“21. Translate the following passage into English:
بچپن عمر کا ایک بہترین حصہ ہے۔ اس لیے آپ نے اکثر بڑے بوڑھوں سے سُنا ہو گا کہ کاش وہ ایک دفعہ پھر بچے بن جائیں۔ شائد اس کی وجہ یہ ہے کہ ہم جوانی اور بڑھاپے کی ذمہ داریوں سے گھبراتے ہیں بچپن میں کوئی ذمہ داری نہیں ہوتی۔ اسی وجہ سے کوئی غم بھی نہیں ہوتا۔ بچہ دن بھر کھیلتا ہے۔ اُس کے والدین اُس سے محبت کرتے ہیں۔ اچھا کھِلاتے ہیں عمدہ لباس خرید کر دیتے ہیں۔ اگر بچے کو قیمتی کپڑے اور کھلونے نہ بھی ملیں تو وہ اِس کی پرواہ نہیں کرتا۔ اِس کے لیے زندگی از خود ایک کھلونا ہے۔”
“22. Translate the following passage into English:
بصرہ میں ایک مشہور تاجر تھا۔ اس کا نام یونس تھا۔ وہ کپڑے کی تجارت کیا کرتا تھا۔ ایک دفعہ ایک عورت اپنے ہاتھ کی بنی ہوئی چادر بیچنے کے لیے اس کے پاس لائی۔یونس نے چادر کی قیمت پوچھی تو اس نے ساٹھ درہم بتائی۔یونس نے وہ چادر ایک اور دکاندار کے پاس بھیجی اور اس سے پوچھا کہ یہ کتنے کی ہوگی۔دکاندار نے جواب دیا میرے خیال میں ایک سو بیس درہم کی ہو گی۔ یونس نے ایک سو بیس درہم دے کر چادر خرید لی۔ ہر مسلمان کو ایسا ہی ایماندار ہونا چاہیے۔”
“23. Translate the following passage into English:
بہار سب موسموں سے زیادہ حسین اور خوشگوار موسم ہے۔ یوں تو موسموں کا چکر سال بھر چلتا رہتا ہے لیکن بہار کے آتے ہی قدرت کا رنگ بدل جاتا ہے۔ فضا کتنی دلکش اور زمین کتنی رنگین نظر آتی ہے۔ سبزہ ہر جگہ پھیلا ہوا نظر آتا ہے۔ گویا کسی نے سبز مخمل کا فرش بچھا دیا ہو۔ رنگ برنگ کے پھول ہوا میں لہلاتے ہیں۔ کلیاں پھول بنتی ہیں اور شاداب پھولوں سے ٹہنیاں لد جاتی ہیں۔ پرندے ہوا میں رقص کرتے ہیں اور گیت گاتے ہیں۔ ہر طرف خدا کی ذات جلوہ گر نظر آتی ہے۔”
“24. Translate the following passage into English:
پاکستان ایک امن پسند ملک ہے۔ ہم اپنے ہمسائیوں سے ہمیشہ دوستانہ تعلقات رکھنا چاہتے ہیں۔ لیکن اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ ہم اپنے دفاع سے غافل ہو جائیں۔ ہمیں اپنے گردوپیش پر نظر رکھنے کی ضرورت ہے۔ ہمیں اتنا مضبوط ہونا چاہیے کہ کوئی ہماری طرف بری آنکھ نہ دیکھ سکے۔ موجودہ زمانے میں مضبوط دفاع ہی امن کی ضمانت ہے۔”
“25. Translate the following passage into English:
پاکستان بنیادی طور پر ایک زرعی ملک ہے اور لوگوں کی ایک بھاری اکثریت دیہات میں رہتی ہے۔ کسانوں کو دن رات محنت کرنی پڑتی ہے۔ لیکن ان کی بہتری اور خوشحالی پر بہت کم توجہ دی جاتی ہے۔ دیہات میں بنیادی سہولتوں کی فقدان ہوتا ہے۔ شائد اسی لیے لوگوں کی بڑی تعداد شہروں کا رخ کرتی ہے۔”
“26. Translate the following passage into English:
پچھلے ماہ مجھے ڈیرہ غازی خاں سے ملتان جانے کا اتفاق ہوا مگر بدقسمتی سے لاری کو حادثہ پیش آگیا۔ ایک کتے کو بچانے کے لیے ڈرائیور نے ہنڈل گھمایا مگر گاڑی پر قابو برقرا نہ رکھ سکا۔ اس نے موٹر روکنے کی کوشش کی مگر بریک نے کام نہ کیا۔ موٹر ایک موٹے سے شہتوت کے درخت کے ساتھ ٹکرا گئی۔ پٹرول کو آگ لگ گئی۔ مسافروں نے جلد جلد باہر چھلانگیں لگائیں۔ چند لوگ موقع پر ہی مر گئے۔ ڈرئیور نے بھاگ جانے کی کوشش کی مگر ایک شخص نے اسے پکڑ لیا۔ جلد پولیس پہنچ گئی اور مسافروں کے بیانات قلم بند کیے۔”
“27. Translate the following passage into English:
پنجابی ایک قدیم زبان ہے۔ لیکن یہ صرف پنجاب ہی میں نہیں بولی جاتی۔ پاکستان کے دوسرے صوبوں میں بھی بولی اور سمجھی جاتی ہے۔ اس کے علاوہ دنیا کا شائد ہی کوئی ملک ایسا ہو جہاں پنجابی بولنے والے نہ رہتے ہوں۔ پنجابی بہت حد تک اردو سے ملتی جلتی ہے۔ دونوں زبانیں ایک ہی رسم الخط میں لکھی جاتی ہیں۔ پنجابی لوک کہانیاں ساری دینا میں مشہور ہیں۔”
“28. Translate the following passage into English:
تعلیم کا اصل مقصد طلباء کے کردار کی تربیت ہے۔ اگر تربیت نہیں ہے تو تعلیم بے معنی ہے۔ مگر ہمارے کالجوں میں بدنظمی دن بدن بڑھ رہی ہے۔ طلباء اپنی پڑھائی پر توجہ نہیں دیتے۔ وہ اساتذہ کا احترام نہیں کرتے۔ وہ کالج باقاعدگی سے نہیں جاتے۔ وہ اپنا وقت فضول کاموں میں ضائع کرتے ہیں۔ وہ غیر نصابی سرگرمیوں میں حصہ نہیں لیتے۔ بہت سے طالب علم سگریٹ نوشی کی طرف مائل ہو جاتے ہیں ۔ہر طالب علم کے پاس موبائل سیٹ ہونا ضروری ہو گیا ہے۔ اساتذہ اور والدین کے لیے بچوں کی تعلیم و تربیت کو اولین ترجیح دینا ضروری ہو گیا ہے۔”
“29. Translate the following passage into English:
تندرستی ایک بڑی نعمت ہے لیکن جب تک آدمی تندرست رہتا ہےاس نعمت کی قدر نہیں کرتا۔ جب کوئی معمولی سی بیماری بھی اسے آ کر گھیر لیتی ہے تو اُسے اس کی قدر معلوم ہوتی ہے۔ اگر جسم کی کسی حصے میں کوئی تکلیف ہو جاتی ہے تو سارا جسم اس کا اثر قبول کرتاہے۔ تندرستی ہو تو کھانے پینے، چلنے پھرنے اور کام کرنے میں چی لگتاہے۔ صحت خراب ہو جائے تو جان پر بن جاتی ہے۔ جو لوگ اکثر بیمار رہتے ہیں ان کی زندگی خود ان کے لیے اور ان کے دوسرے متعلقین کے لیے وبال بن جاتی ہے۔ بیماری سے تکلیف الگ ہوتی ہے اور دوا علاج پر خرچ الگ ہوتاہے۔ بیمار آدمی زندہ درگور ہو جاتاہے۔”
“30. Translate the following passage into English:
تندرستی بڑی نعمت ہے۔ لیکن آدمی جب تک تندرست رہتا ہے اِس نعمت کی قدر نہیں کرتا۔ جب کوئی معمولی سی بیماری آکر اُسے گھیر لے تو اس کی قدر معلوم ہوتی ہے۔ اگر جسم کے کسی حصے میں کوئی تکلیف ہو جاتی ہے تو سارا جسم اثر قبول کرتا ہے۔ تندرستی ہو تو کھانے پینے، چلنے پھرنے اور کام کرنے میں جی لگتا ہے۔ صحت خراب ہو جائے تو کسی چیز میں مزہ نہیں آتا۔ جو لوگ اکثر بیمار رہتے ہیں ان کی زندگی خود ان کے اور ان کے دوسرے متعلقین کے لیے وبال بن جاتی ہے۔”
“31. Translate the following passage into English:
تندرستی بڑی نعمت ہے۔ لیکن آدمی جب تک تندرست رہتا ہے اس نعمت کی قدر نہیں کرتا۔ جب کوئی معمولی بیماری بھی اسے  آ کر گھیر لے تو اس کی قدر معلوم ہو جاتی ہے۔ اگر جسم کے کسی حصے میں تکلیف ہو جاتی ہےتو سارا جسم اثر قبول کرتا ہے۔ تندرستی ہو تو کھانے پینے، چلنے پھرنے اور کام کرنے میں جی لگتا ہے۔ صحت خراب ہو جائے تو کسی چیز میں مزہ نہیں آتا۔جو لوگ اکثر بیمار رہتے ہیں ان کی زندگی خود ان کے اور ان کے دوسرے متعلقین کے لیے وبالِ جان بن جاتی ہے۔”
“32. Translate the following passage into English:
تندرستی ہزار نعمت ہے۔ ایک تندرست ذہن صرف تندرست جسم کے اندر ہی پرورش پا سکتا ہے۔ اس لئے ضروری ہے کہ ہم اپنی جسمانی صحت کا ہمیشہ خیال رکھیں۔ اگر ہم اپنی عادات میں باقاعدگی پیدا کر لیں تو یقیناً ہماری صحت پر خوشگوار اثر پڑے گا۔ متوازن غذا اور ورزش کے بغیر اچھی صحت کا کوئی تصور نہیں ۔ مختصراً یہ کہ صحت اچھی ہے تو زندگی پُرلطف بھی ہے۔ بیمار جسم زندگی سے ساری چاشنی ختم کر دیتا ہے۔”
“33. Translate the following passage into English:
ٹھنڈی ٹھنڈی ہوا چل رہی ہے۔ باغ میں رنگ برنگ کے پھول کھِلے ہوئے ہیں۔ مشرق سے سورج نکل رہا ہے۔ اس کی شعاعیں ہری ہری گھا س پر پڑ رہی ہیں۔ سبز مخمل کے اِس فرش پر ہر طرف اوس کے قطرے پڑے ہوئے ہیں۔ یہ قطرے موتیوں کی طرح چمک رہے ہیں۔ درختوں کی ڈالیاں ہوا میں جھوم رہی ہیں۔ قریب ہی ٹیوب ویل چل رہا ہے۔ ایک کونے میں مالی پودے لگا رہا ہے۔ دوسرے کونے میں لوگ ورزش کر رہے ہیں۔ کچھ لڑکے سبزہ زار میں ٹہل رہے ہیں اور تماشا دیکھ رہے ہیں۔”
“34. Translate the following passage into English:
ٹیلی ویژن نہ صرف تفریح بلکہ تعلیم کا بھی ایک اہم ذریعہ ہے۔ اس کی افادیت سے کوئی انکار نہیں کر سکتا۔ یہ قومی تعمیر و ترقی میں بہت اہم رول ادا کرتا ہے۔ یہ عوام میں بہت زیادہ مقبول ہے۔ پاکستان ٹیلی ویژن نے بہت اچھے اچھے پروگرام پیش کئے ہیں۔ اسکے ڈراموں کا معیار کسی بھی دوسرے ٹیلی ویژن کے ڈراموں سے کم نہیں۔ بہرحال اس کے پرگراموں کو مزید بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔”
“35. Translate the following passage into English:
جب آپ عمر رسیدہ ہو رہے ہوں تو بعض اوقات آپ پر غنودگی طاری ہو جاتی ہے اور وقت کسی چراگاہ سے گزرتے ہوئے مویشیوں کی طرح گزرنے لگتا ہے۔ یہی حال چپس کا بھی تھا۔ وہ کسی بوڑھے سمندری کپتان کی طرح وقت کو ماضی کی علامات سے ماپتا تھا۔ بروک فیلڈ سکول اس کے لیے گرین وچ ٹائم سے بھی زیادہ اہم تھا۔ بڑھاپے میں آگ کے پاس بیٹھ کر چائے پینا اسے اچھا لگتا تھا۔ وہ اکثر ماضی کی یادوں میں کھویا رہتا تھا۔”
“36. Translate the following passage into English:
جب شام کو سلطان فتح علی ٹیپو کی لاش مردہ سپاہیوں کے ڈھیر سے نکال لی گئی تو اسُ کی تلوار، پیٹی، اور پگڑی غائب تھی۔ زندگی کی طرح مرنے کے بعد بھی اُس کے چہرے سے بے خوفی عیاں تھی۔ جسم گرم تھا ور چہرہ صحیح سالم۔ ایک ناقابل بیان سکون سے اس کا چہرہ منور تھا۔ سلطان شہید کی موت کے ساتھ ہی ہندوستان کے آزاد ہونے کی تمام امیدیں ختم ہو گئیں مگر ان کی موت رائیگاں نہ گئی۔ ان کی شاندار یادیںآنے والی نسلوں کے لیے مینارہ نور ثابت ہوئیں۔ پاکستان کا قیام بھی سلطان فتح علی کے خواب کے شرمندہ تعبیر ہونے کی وجہ سے ہے۔”
“37. Translate the following passage into English:
حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم مکہ میں پیدا ہوئے۔ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے والد کا نام عبداللہ تھا۔ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے دادا نے آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی پرورش کی ۔ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم بچپن ہی سے دیانتدار اور سچے تھے۔ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی شادی حضرت خدیجہ رضی اللہ عنہا سے ہوئی۔ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے چالیس برس کی عمر میں نبوت کا اعلان فرمایا۔ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے لوگوں کو ایک خدا کی عبادت کا حکم دیا۔ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے بتوں کی پوجا سے منع فرمایا۔ اللہ تعالیٰ ہمیں حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے نقش قدم پر چلنے کی توفیق دے۔”
“38. Translate the following passage into English:
حضور صلی اللہ علیہ وسلم اللہ تعالیٰ کے آخری نبی ہیں۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم مکہ میں پیدا ہوئے۔ عرب ا ُس زمانے میں بُت پرست تھے۔ پورا معاشرہ مختلف برائیوں میں مبتلا تھا۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے بہت پاکیزہ زندگی گزاری۔ چالیس برس کی زندگی میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے اسلام کی تبلیغ کا آغاز کیا۔ عرب فوراً آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے خلاف ہو گئے۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم کو کئی طرح سے تنگ کیا گیا۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے سب مشکلات برداشت کیں۔ کچھ لوگوں نے اسلام قبول کر لیا۔ یہ زیادہ تر غریب لوگ تھے۔”
“39. Translate the following passage into English:
حقوق و فرائض کا چولی دامن کا ساتھ ہے۔ جب ایک فرد اپنے فرائض ادا نہیں کرتا دوسرے کے حقوق پامال ہوتے ہیں۔ اسلام نے حقوق و فرائض کی حدود متعین کر دی ہیں۔مگر حقوق عموما پامال ہوتے رہتے ہیں۔ سرکاری افسران آرام طلب ہو چکے ہیں۔ وہ عوام کی فلاح کی طرف کوئی توجہ نہیں دیتے۔ لہٰذا عوام کے مسائل حل ہو نے کی بجائے  آئے روز بڑھتے جاتے ہیں ۔ “
“40. Translate the following passage into English:
خدا سے محبت انسان کی فطرت میں موجود ہے۔ وہی ہمارا خالق اور مالک ہے۔ وہ ہمیں زندہ رکھے ہوئے ہے۔ وہی ہمیں مارے گا۔ وہ بہت رحم کرنے والا اور معاف کرنے والا ہے۔ ہمیں اس کے احکامات کی تعمیل کرنی چاہیے۔ اس کے رسولوں پر ایمان لانا چاہیے اور ان کی پیروی کرنی چاہیے۔”
“41. Translate the following passage into English:
دنیا میں دُکھ اور سُکھ دونوں ہی ہیں۔ اگر کوئی چاہے کہ دنیا میں مجھے ہر طرح کا سُکھ ملے اور کسی طرح کا دُکھ نہ اٹھانا پڑے تو کیا ایسا ہو سکتا ہے؟ بعض بے کس غریب اپنی حالت پر ہمیشہ کہتے ہیں کہ ہم نے کبھی خواب میں بھی آرام نہیں پایا۔ یہ سرا سر بھول ہے کسی اپنے سے زیادہ کنگال اور بے کس کو دیکھیں تو حقیقت کھُلے ۔ قناعت بڑی دولت ہے۔ خوش وہ ہے جو بُرے کاموں سے بچتا ہے۔”
“42. Translate the following passage into English:
دنیا میں دو قسم کے لوگ ہیں۔ ایک وہ جو ہر چیز کے روشن پہلو پر نظر رکھتے ہیں۔ وہ ہر کام کو اِس یقین کے ساتھ شروع کرتے ہیں کہ ہم اِس میں ضرور کامیاب ہوں گے۔ وہ مشکلات اور عارضی رکاوٹوں کا مقابلہ کرتے ہیں اور آخر کار ضرور ہی کامیاب ہو جاتے ہیں۔ قانون قدرت بھی یہی ہے کہ خدا اُن لوگوں کی مدد کرتا ہے، جو اپنی مدد آپ کرتے ہیں۔ دوسری قسم اُن کمزور دل اور بودے لوگوں پر مشتمل ہے جو کام شروع کرنے سے پہلے ہی اپنی کامیابی پر شک کرتے ہیں۔ تذبذب اور دو دِلی ان کا طبعی خاصہ ہوتا ہے۔ قانون قدرت اِن کی کوئی مدد نہیں کرتا اور نصرتِ خدا وندی ان کی کوئی مدد نہیں کرتی۔”
“43. Translate the following passage into English:
ڈاکٹر جانسن اور آلیور گولڈ سمتھ کے زمانے میں یورپ میں ملحدانہ خیالات کا بہت زور ہو گیا۔ دونوں نے ایک انجمن قائم کی تاکہ مضامین اور کتابیں لکھ کر خدا کا وجود اور اِس کی ضرورت ثابت کی جائے۔ ایک روز دفتر میں بیٹھے ایک بلند پایہ کتاب کی تصنیف میں مصروف تھے کہ ایک ملحد آگیا اور کہنے لگا “تم دونوں ایک ایسی چیز کا وجود ثابت کر رہے ہو جو موجود نہیں ہے۔ اپنا وقت کسی بہتر کام میں صرف کرو۔” ڈاکٹر جانسن ایک طویل قامت اور گرانڈیل نوجوان تھا ۔ یہ سُن کر اُٹھا اور ملحد کو ایک ایسی شدید ٹھوکر لگائی کہ اُس کی زبان سے شدتِ درد سے بے اختیار نکلا “ہائے میرے اللہ” ڈاکٹر نے کہا ” یہ ہے وہ خدا جس کا تم انکار کرتے ہو۔””
“44. Translate the following passage into English:
ذرا سوچیے! آپ خوش کیسے رہ سکتے ہیں؟ جب خود آپ کے ہاں تو عید کا جشن منایا جا رہا ہو، آپ مجبور اور بےبس لوگوں سے چپکے سے گزر جائیں۔ آپ کو چاہیے ایسے لوگوں کا سہارا بنیں۔ ان کے ساتھ جتنی خوشیاں بانٹیں گے، آپ کی خوشیوں میں اتنا ہی اضافہ ہوگا”
“45. Translate the following passage into English:
راستے میں مجھے ایک غریب عورت ملی ۔ وہ پھوٹ پھوٹ کر رو رہی تھی۔ میں نے اس کے رونے کا سبب معلوم کیا تو وہ بولی کہ اس کا شوہر مقروض تھا ۔ وہ قرض ادا نہ کر سکا اور گرفتار کر لیا گیا۔ گھر میں روزی کمانے والا کوئی اور نہ تھا۔ اب وہ عورت اور اس کے آٹھ بچے فاقے کر رہے تھے ۔ مجھے اس غریب کی حالت پر بہت رحم آیا اور میں نے اسے ایک سو روپے دیے۔ لیکن مجھے اطمینان تھا کہ بہت جلد اپنے مہربان دوست کے گھر پہنچ جاؤں گا اور مجھے وہاں کسی قسم کی نکلیف نہ ہو گی۔”
“46. Translate the following passage into English:
رشوت ستانی اور بد عنوانی ہمارے معاشرے کا حصہ بن چکی ہے۔ ان کا تعلق کسی  ایک ادارے یا سوسائٹی کے مخصوص  حصے سے نہیں ہے۔ بلکہ یہ تو ہر محکمے اور ہر ادارے کا لازمی جزو نظر آتی ہیں۔  زندگی اب  بالکل سادہ نہیں  رہی۔  درمیانہ طبقہ دولت مندوں کی نقل میں  اپنے راستے سے بھٹک گیا ہے۔  ہم سامانِ تعیش کو حاصل کرنے  میں اپنا بہت سا وقت صرف کر دیتے ہیں۔  دوسروں کو نیچا دکھانے اور راتوں رات امیر بننے  کی دوڑ معاشرے کو رشوت ستانی اور  بد عنوانی کی طرف دھکیل رہی ہے۔”
“47. Translate the following passage into English:
رضیہ سلطانہ سلطان شمس الدین التمش کی بڑی بیٹی تھیں۔ التمش اسے بہت پیار کرتا تھا۔ وہ التمش کی ساری اولاد میں سب سے زیادہ ذہین، عقل مند اور لائق تھی۔ رضیہ کے سب بھائی کند ذہن، نکمے اور کھلنڈرے تھے۔ وہ پڑھنے لکھنے سے بھاگتے اور سپاہیانہ مشغلوں سے جی چراتے تھے۔ مگر رضیہ خوب جی لگا کر پڑھتی لکھتی تھی اور ہر کام توجہ اور شوق سے کرتی تھی۔ التمش نے اپنی نور نظر میں یہ خوبی دیکھی تو ملکی معاملات میں بھی اس سے مشورے لینے لگے۔”
“48. Translate the following passage into English:
طارق نے مجاہدین کو اکٹھا کیا اور کہا “فرزندانِ توحید! ہم واپس نہیں جائیں گے۔ تمام زمین اللہ کی ملکیت ہے جو ہمارا مالک ہے۔ چنانچہ اب ہسپانیہ کو ہی اپنا گھر سمجھو۔ ہمارے پیچھے گہرا سمندر ہے اور سامنے طاقتور دشمن۔ اگر بزدلوں کی طرح پسپا ہوئے تو سمندر کی لہریں ہمیں نگل لیں گی۔ اگر جرات و حوصلے کے ساتھ آگے بڑھ کر دشمن کا مقابلہ کیا تو دو میں سے ایک بات ممکن ہے۔ یا تو ہم دشمن کو شکست دے کر غیر فانی شہرت حاصل کریں گے یا میدان جنگ میں شہید ہو کر اپنے مذہب کی عظمت کا باعث ہوں گے۔ میں تلوار نکال کر آگے بڑھتا ہوں جس نے آنا ہو آ جائے۔””
“49. Translate the following passage into English:
علامہ اقبال کو مسلمانوں کی غربت کا بہت دُکھ تھا۔ آپ نے ہندوستان کے مسلمانوں کو آزادی حاصل کرنے پر ابھارا۔ آپ نے اپنے اشعار سے قوم میں ایک نئی روح پھونکی۔ آپ نے مسلمانوں کو عمل پر اُکسایا۔ آپ کی شاعری اُمید سے بھری ہے۔ آپ نے ہندوستان کے مسلمانوں کے لیے ایک الگ وطن کے قیام کا مطالبہ کیا۔”
“50. Translate the following passage into English:
علامہ اقبال ہمارے قومی شاعر ہیں۔ وہ سیالکوٹ میں پیدا ہوئے۔ انہوں نے اپنی ابتدائی تعلیم بھی وہیں حاصل کی۔ اس کے بعد آپ لاہور چلے آئے۔ آپ نے فلسفہ میں ایم۔ اے کیا۔ گورنمنٹ کالج میں انہوں نے کچھ دن وہ گورنمنٹ کالج میں پروفیسر بھی رہے۔ پھر وہ انگلستان چلے گئے۔ انگلستان سے واپسی پر لاہور میں وکالت شروع کی لیکن انہیں یہ کام پسند نہ آیا۔ ان کی زیادہ تر دلچسپی شاعری اور قومی مسائل میں تھی۔ انہوں نے اپنے جذبات کو اپنے اشعار میں بیان کیا ہے۔”
“51. Translate the following passage into English:
علم ایک عظیم قوت ہے۔ علم کے ذریعے ہمیں مادی دولت ہی نہیں بلکہ روحانی سکون بھی حاصل ہوتا ہے۔ ہمارے مذہب میں علم حاصل کرنا ہر شخص پر فرض ہے۔ یہ ایک ایسی چیز ہے جسے کوئی چُرا نہیں سکتا۔ علم کے بغیر کوئی انسان اپنی ذات کو بھی نہیں پہچان سکتا اور یوں ہی ساری زندگی اپنے مقصدِ حیات سے بے خبر رہتا ہے۔ علم حاصل کر کے انسان اپنے معاشرے اور قوم کی بہتری کا سبب بن سکتا ہے۔ لہٰذا ہمیں اپنی تمام تر توانائیاں حصولِ علم کے لئے وقف کر دینی چاہیے۔”
“52. Translate the following passage into English:
فتح خیبر حضرت علیؓ کا یک عظیم کارنامہ ہے۔ ہی وجہ ہے کہ مسلمان انہیں شیر خدا کہتے ہیں۔ وہ نہ صرف بہادر بلکہ رحم دل بھی تھے۔ وہ غریبوں اور کمزوروں کو اپنی طرف بلاتے اور ان سے محبت کا سلوک کرتے تھے۔ وہ پرہیز گاروں اور نیکوں کی عزت کرتے تھے۔ وہ ایک عظیم عالم تھے۔ وہ ہر چیز پر غوروفکر کرتے تھے۔ جب کبھی لوگوں کو کوئی مشکل پیش آتی تو وہ آپ کے پاس جاتے اور ان سے مشورہ کرتے تھے۔ آپ کی زندگی بہت سادہ تھی۔ وہ سادہ خوراک کھاتے اور سادہ لباس پہنتے تھے۔ جب وہ خلیفہ بنے تب بھی ان کی زندگی سادہ رہی۔”
“53. Translate the following passage into English:
فیشن بدلتے رہتے ہیں۔ کبھی کالر اور پائنچے بڑے ہوتے ہیں اور کبھی بہت ہی مختصر۔ قمیضوں کی لمبائی بھی گھٹتی بڑھتی رہتی ہے۔ جس طرح لباس کے فیشن بدلتے ہیں اسی طرح ادب کے فیشن بھی بدلتے رہتے ہیں۔ کل پرانی شاعری تھی آج نئی شاعری ہے۔ پہلے شاعرانہ نثر کا دور تھا اب نثری نظم کا زمانہ ہے۔ یہ تبدیلیاں ہی زندگی کو خوبصورت بناتی ہیں۔”
“54. Translate the following passage into English:
قائدِاعظم محمد علی جناح کا سب سے بڑا کارنامہ پاکستان کا قیام ہے۔ ان کی شخصیت کے کئی پہلو تھے۔ مسلسل جدوجہد ان کی زندگی کا خاصا تھا۔ وہ انتھک محنت کو کامیابی کا زینہ سمجھتے تھے۔ کام کی زیادتی کی وجہ سے وہ بیمار پڑ گئے۔ ڈاکٹروں نے انہیں آرام کرنے کا مشورہ دیا لیکن انہوں نے ان کے مشورے پر عمل کرنے سے انکار کر دیا۔ بالآخر کام کی یہی زیادتی ان کی موت کا سبب بنی۔”
“55. Translate the following passage into English:
قائد اعظم کو اپنی قوم کے طالب علم نوجوانوں پر فخر تھا۔ آپ چاہتے تھے کہ طلبہ نے قیام پاکستان کے لیے جس جذبے اور لگن سے کام کیا تھا اسی جذبے اور لگن کے ساتھ ان کی تعمیر و ترقی اور استحکام کے لیے کوشش کریں۔ طلبہ سے خطاب کرتے ہوئے ان کی توجہ ہمیشہ حصول ِ علم کی طرف دلائی۔ انہوں نے کہا کہ علم ایک عظیم قوت ہے۔ بے شک اگر ہم ترقی کرنا چاہتے ہیں تو ہمیں تعلیم پر مکمل توجہ دینا ہو گی۔”
“56. Translate the following passage into English:
قائد اعظم کو اپنی قوم کے طالب علم نوجوانوں پر فخر تھا۔آپ چاہتےتھے کہ طلباء نے پاکستان کے قیام کے لیے جس جذبے اور لگن سے کام کیا تھا اسی جذبے اور لگن کے ساتھہ اس کی تعمیر و ترقی اور استحکام کی کوشش کریں۔ سات مارچ 1948 ء کو طلباء کے ایک عظیم اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے فرمایا۔”
“57. Translate the following passage into English:
قومی کردار کا پہلا جزو حب الوطنی ہے۔ حب الوطنی ایک ایسا جذبہ ہے جو ذاتی مفادات کو قومی مفادات پر قربان کر دیتا ہے۔ آزاد ملک کے شہری کو ہر کام سے پہلے سوچنا چاہیے کہ ایسا کرنا قوم کے لیے فائدہ مند ہے یا نہیں۔ قومی کردار کا دوسرا اہم جزو زندگی کے ہر شعبے میں دیانت داری اور انصاف برتنا ہے۔”
“58. Translate the following passage into English:
قیصرِ روم نے اپنا ایلچی حصرت عمرؓ کے پاس بھیجا تاکہ آپ کے حالات و خیالات اور انتظامات سلطنت سے واقف ہو سکے۔ جب وہ مدینہ منورہ پہنچا تو وہاں کے لوگوں سے دریافت کیا کہ تمھارا بادشاہ کہاں ہے؟ لوگ کہنے لگے کہ ہمارا بادشاہ تو کوئی نہیں البتہٰ ایک امیر ہے جو کہیں شہر سے باہر نکلاہے۔ قاصد آپ کی تلاش میں نکلا تو کیا دیکھتاہے کہ آپ اپنے کوڑے کو بطور تکیہ رکھے ہوئے دھوپ میں گرم ریت پر سو رہے ہیں۔آپ کی پیشانی سے اس قدر پسینہ بہہ رہا ہے کہ اس نے زمین کو تر کر دیاہے۔یہ دیکھ کر وہ سخت متعجب ہوا اور اس نتیجے پر پہنچا کہ حضرت عمرؓ عدل کرتے ہیں اور بے خوف سو رہے ہیں۔ ہمارا بادشاہ ظلم کرتاہے اس لیے ہمیشہ خائف اور بیدار رہتاہے۔”
“59. Translate the following passage into English:
کالجوں میں بدنظمی دن بدن بڑھ رہی ہے۔ طلباء اپنی پڑھائی پر توجہ نہیں دیتے۔ وہ اساتذہ کا احترام نہیں کرتے۔ وہ کالج باقاعدگی سے نہیں جاتے۔ اگر وہ ہفتہ میں ایک یا دو بار کالج چلے بھی جائیں تو اپنا وقت فضول باتوں میں ضائع کر دیتے ہیں۔ وہ صحت مندانہ غیر نصابی سرگرمیوں میں حصہ نہیں لیتے۔ وہ سگرٹ نوشی اور بیہودہ فلموں کے دلدادہ ہیں۔ یہ صورتِ حال انتہائی افسوس ناک ہے۔ اگر اساتذہ ، والدین اور حکومت نے اپنی ذمہ داریاں پوری نہ کیں تو ہمارا نظام تعلیم تباہ ہو جائے گا۔”
“60. Translate the following passage into English:
کتابیں بہت بڑی نعمت ہیں۔ وہ انسان کے صدیوں کے تجربات کا نچوڑ ہیں۔ وہ ایک ایسا بیش قیمت ورثہ ہیں جو تہذیب نے انسان کو بخشا ہے۔ یہ علم و قوت کا سرچشمہ ہیں۔ یہ ہر موضوع پر ہمیں معلومات مہیا کرتی ہیں اور ہمارے دماغ کو منور کرتی ہیں۔ یہ دولت سے زیادہ قیمتی ہیں۔ یہ ہماری بہترین دوست ہیں جو مصیبت میں ہمارا ساتھ نہیں چھوڑتیں بلکہ ہمارا حوصلہ بڑھاتی ہیں اور صبر و استقلال سے مشکلات پر غالب آنے کا سبق دیتی ہیں اور خوشی اور اسودگی کے وقت ہمیں متانت اور سنجیدگی کا سبق دیتی ہیں۔ کتابوں کے انتخاب میں احتیاط سے کام لینا چاہیے۔ بعض کتابیں بچھو سے زیادہ خطرناک اور سانپ سے زیادہ زہریلی ہوتی ہیں ان سے پرہیز کرنا لازمی ہے۔”
“61. Translate the following passage into English:
کتابیں بھی عجیب نعمت ہیں۔ جب رنج و الم کے بادل ہماری زندگی کو تاریک کر دیتے ہیں تو یہ شیریں الفاظ میں ایک سچے دوست کی طرح ہماری ڈھارس بندھاتی ہیں۔ یہ کبھی ہمیں تنہا نہیں چھوڑتیں۔ لیکن کتابوں کے انتخاب میں ہمیں بڑی احتیاط سے کام لینا چاہیے۔ بعض کتابیں سانپ سے زیادہ زہریلی اور بچھو سے زیادہ خطرناک ہوتی ہیں۔ ہمیں ہمیشہ اچھی اور فائدہ مند کتابیں ہی پڑھنی چاہئیں۔”
“62. Translate the following passage into English:
کسی قوم کی قوت کا راز اُس کی افراد کی قوت میں مضمر ہوتا ہے۔ ہر پاکستانی کو چاہیے کہ وہ خود کو ایک عظیم مملکت کا اچھا شہری ثابت کرے۔ سپاہی ، تاجر ، ملازم اور سب سے بڑھ کر طلبہ، سب کے لیے لازم ہے کہ ملکی ترقی کے لیے کوشاں رہیں۔ قائدِاعظم نے اپنی اکثر تقاریر میں طلبہ کو نصیحت کی ہے کہ وہ نظم و ضبط کو اپنا شعار بنائیں۔ خود کو تعلیم سے آراستہ کرنے میں دن رات ایک کر دیں۔”
“63. Translate the following passage into English:
مجھے کتابیں پڑھنے کا بڑا شوق ہے۔ اس لیے اپنا فارغ وقت زیادہ تر کالج لائبریری میں گزارتا ہوں۔ میں گھنٹوں پیٹھا کتابوں کا مطالعہ کرتا ہوں اور دنیا کے عظیم عالموں سے استفادہ کرتا ہوں۔ بعض دفعہ سوچتا ہوں کہ طلباء کی اکثریت لائبریری میں کیوں  نہیں آتی؟ یہ جگہ ویران کیوں ہے؟اگر طلباء میں مطالعہ کا شوق پیدا ہو جائےتو ہمارا ملک دن دوگنی رات چوگنی ترقی کرے گا۔”
“64. Translate the following passage into English:
مجھے کتابیں پڑھنے کا بہت شوق ہے۔ اس لیے میں اپنا فارغ وقت زیادہ ترکالج لائبریری میں گزارتا ہوں۔ میں کئی گھنٹوں بیٹھا کتابوں کا مطالعہ کرتا ہوں اور دنیا کے عظیم عالموں سے استفادہ کرتا ہوں۔ بعض دفعہ سوچتا ہوں کہ طلباء کی اکثریت لائبریری کیوں نہیں آتی؟ یہ جگہ ویران کیوں ہے؟ طلبا تعلیم کی طرف توجہ کیوں نہیں دیتے؟ اگر طلباء میں مطالعہ کا شوق پیدا ہو جائے تو ہمارا ملک دن دُگی رات چوگنی ترقی کرے گا۔”
“65. Translate the following passage into English:
مسلمانوں کو قائدِ اعظمؒ پر پورا اعتماد تھا۔ وہ آپ کی ہر بات مان لینے پر فخر محسوس کرتے تھے۔ قائدِ اعظم ؒ نے مسلمانوں کو متحد ہو جانے کا مشورہ دیا۔ مسلمانوں نے آپ کی نصیحت پر عمل کیا۔ قائدِ اعظم ؒ نے پاکستان کے قیام کے لیے سخت محنت کی۔ آخر کار اگست 1947 میں پاکستان بن گیا اور ہمارے عظیم قائدؒ کو ان کی محنت کا پھل مل گیا۔”
“66. Translate the following passage into English:
موبائل فون موجودہ دور کی ایجاد ہے۔ اس کے بے شمار فائدے ہیں۔ یہ رابطے کا سب سے مؤثر اور سستا ذریعہ ہے۔ لیکن اس کے نقصانات بھی ہیں۔ ہمیں اس کے غلط استعمال کی حوصلہ شکنی کرنی چاہیے۔ موبائل فون پر دوسروں کو تنگ کرنا بہت ناپسندیدہ بات ہے۔ ہم سب کو اس کے غلط استعمال کو ترک کر دینا چاہیے۔ جو لوگ دوسروں کو تنگ کرتے ہیں وہ خود بھی خوش نہیں رہ سکتے۔”
“67. Translate the following passage into English:
موجودہ حالات میں سب سے اہم ضرورت پیداوار بڑھانے اور قیمتوں کو کم کرنے کی ہے۔ عام آدمی معاشی طور پر پریشان ہے۔ اس کی آمدنی اس کے روز مرّہ کے اخراجات سے کم ہے۔ کم آمدنی کے پیشِ نظر روز مرّہ استعمال کی چیزوں کی قیمتیں کم ہونی چاہئیں۔ یہ اسی صورت میں ممکن ہے کہ زراعتی اور صنعتی پیداوار میں زبردست اضافہ ہو اور لوگ دن رات محنت کریں۔”
“68. Translate the following passage into English:
موسم سرما ختم ہو چکا ہے اور مارچ کا مہینہ شروع ہو گیا ہے۔ بہار آگئی ہے۔ درختوں پر نئے نئے پتے نکل آئے ہیں۔ باغوں میں رنگ رنگ کے پھول کھلے ہوئے ہیں۔ فصلیں پک چکی ہیں۔ ہمارا امتحان بھی ختم ہو گیا ہے۔ میں نے کوئی سوال نہیں چھوڑا ہے بلکہ سارے سوال حل کیے ہیں۔ مجموعی طور پر میں نے پرچے اچھے کیے ہیں۔ موسم بہار کی چھٹیوں میں میں نے کہانیوں کی کتابیں پڑھنے کا ارادہ کر لیاہے۔”
“69. Translate the following passage into English:
ہارون الرشید ایک مشہور بادشاہ ہو گزرا ہے۔ اس کے دو بیٹے تھے۔ امین اور مامون۔ ایک دن دونوں لڑکے اپنے استاد کے پاس سبق پڑھ رہے تھے۔ اتفاق سے استاد کو کسی کام کے لیے اٹھنا پڑا۔ استاد ابھی تیار ہو کر چلنے ہی والے تھے کہ دونوں لڑکے ان کی جوتیاں سیدھی کرنے کے لیے دوڑ پڑے۔ ہر ایک چاہتا تھا کہ استاد کی جوتیاں میں سیدھی کروں۔ آخر استاد نے یہ کہہ کر جھگڑا چکا دیا کہ ہر لڑکا ایک ایک جوتی سیدھی کرے۔ جب ہارون الرشید کو اس بات کی خبر ملی تو وہ بہت خوش ہوا۔”
“70. Translate the following passage into English:
ہم اکثر ٹی۔ وی پر سگریٹ کی تشہیر کا وزارتِ صحت کا یہ اشتہار دیکھتے ہیں۔ ”خبردار! تمباکو نوشی کینسر اور دل کی بیماریوں کا باعث ہے۔“ لیکن صرف ٹی۔ وی پر یہ اشتہار چلانے سے مسئلہ حل نہیں ہو گا۔ سگریٹ نوشی کو جڑ سے ختم کرنے کیلئے ٹھوس منصوبہ بندی اور بہتر اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔ لوگوں کو سگریٹ نوشی کے نقصانات اور بالخصوص شرعی نقطہ نظر سے آگاہی دی جائے۔ ہمیں چاہیے کہ ہم اپنی نوجوان نسل کو خوش خوراکی اور سیر کا عادی بنائیں۔”
“71. Translate the following passage into English:
ہم پاکستان کے نوجوان ہیں۔ ہمیں چاہیے کہ محنت کریں اور پوری دیانت داری سے اپنا کام کریں۔ اپنے وطن اور اہلِ وطن کے لیے ایسے کام کریں کہ جو کوئی ہمیں دیکھے ہماری تعریف کرے۔ وقت آنے پر ہم اپنے وطن کے لیے اپنی زندگی کی بازی لگانے کی بھی پرواہ نہ کریں۔ ہر قربانی کے لیے تیار ہو جائیں اور دشمن کے ناپاک ارادوں کو خاک میں ملا دیں۔ اِس طرح دنیا پر ثابت کر دیں کہ پاکستان کے باشندے ایک زندہ قوم ہیں اور ناموس وطن کی خاطر بڑی سے بڑی قربانی سے بھی گریز نہیں کریں گے۔”
“72. Translate the following passage into English:
ہم پاکستان کے نوجوان ہیں۔ ہمیں چاہیئے کہ محنت کریں اور دیانت دری کے ساتھ اپنا کام کریں ، وطن اور اہل وطن کی خدمت کے لیے تیار رہیں۔ عمر میں بڑوں کا احترام کریں۔ عمر میں چھوٹوں سے پیار کریں۔ امن کے دور میں محبت کا درس دیں۔ اگر ملک پر بُرا وقت آئے تو اپنی جان نچھاور کرنے سے بھی دریغ نہ کریں۔دُشمن کے ناپاک ارادے خاک میں ملا دیں۔ اس طرح دنیا پر ثابت کر دیں کہ پاکستان کے باشندے ایک زندہ قوم ہیں۔ قائدِاعظم کے پاکستان کی حفاظت ہمارا اولین فرض ہے۔ پاکستان کی بقا ہماری بقا ہے۔”
“73. Translate the following passage into English:
ہم چار دوست مل کر ایک دن لاہور گئے۔ پہلی دفعہ ہم نے لاہور کا سفر کیا تھا۔ لاہور کا ریلوے اسٹیشن بہت بڑا ہے۔ ایک ٹانگہ پر بیٹھ کر اپنے دوست کے مکان پر گئے۔ یہ دوست خود لینے کیلئے اسٹیشن پر آیا تھا۔ بڑے تپاک سے ملا۔ اپنے ہمراہ ہمیں اپنے کشادہ مکان میں لے گیا۔ ایک دن تو ہم نے آرام کیا۔ دوسرے دن لاہور کے مشہور مقامات کی سیر شروع کر دی۔ پہلے بادشاہی مسجد اور قلعہ دیکھا۔ اگلے دن شالا مار باغ گئے۔ تیسرے دن شہنشاہ جہانگیر اور ملکہ نور جہاں کے مقبرے دیکھے۔ آخری روز شارع قائدِاعظم اور چڑیا گھر کی باری آئی۔ ہم نے خوب لطف اُٹھایا۔”
“74. Translate the following passage into English:
ہمارے سکولوں میں بچوں کو جسمانی سزا دی جاتی ہے۔ اس کا مقصد بظاہر بچے کی اصلاح کرنا ہوتا ہے لیکن دیکھا گیا ہے کہ سزا کی وجہ سے بچے خود اعتمادی کھو دیتے ہیں۔ اُن میں جارحانہ رویہ پیدا ہوجا تا ہے اور بغاوت کے جذبات پیدا ہوتے ہیں۔ نتیجے کے طور پر وہ استاد اور سکول سے نفرت شروع کر دیتے ہیں اور سکول جانا چھوڑ دیتے ہیں۔”
“75. Translate the following passage into English:
ہندوستان نے پاکستان کے ساتھ پانی کے معاہدوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے پاکستان کے تمام بڑے دریاؤں پر کئی ڈیم بنا دیئے ہیں۔ چونکہ ان دریاؤں کے مآخذ ہندوستان اور مقبوضہ کشمیر میں ہیں اس لئے ہندوستان کے لئے ایسا کرنا آسان رہا۔ اب ہمارے دریا خشک ، ڈیم خالی اور کھیت بےفصل دکھائی دیں گے اور سرسبز پنجاب تھر اور چولستان بن جائے گا۔ ہمارے حکمرانوں نے کالا باغ ڈیم پر سیاست کی ہے۔ پانی کے مسئلے پر ہمیں ہندوستان کے ساتھ ایٹمی جنگ ہی کیوں نہ کرنا پڑے ہمیں اس سے گریز نہیں کرنا چاہیے۔”
“76. Translate the following passage into English:
یورپ کے مُلک سپین میں ایک جگہ ہے جِسے جبرالٹر کہتے ہیں۔ اِس کا نام مسلمان جرنیل طارق کے نام پر رکھا گیا ہے۔ جب طارق اپنی فوج کو لے کر سپین کے ساحل پر اترا تو اس نے وہ تمام کشتیاں جلوا ڈالیں جن پر اُس کی فوج یہاں آئی تھی۔ اُس نے یہ کشتیاں اِس لیے جلائی تھیں کہ فوج کے دل میں واپسی کا خیال ہی پیدا نہ ہو۔ طارق کی فوج بیس ہزار تھی اور سپین کے بادشاہ راڈ رک کی فوج ایک لاکھ۔ اس جنگ میں طارق کی فوج نے راڈرک کی فوج کو شکست فاش دی۔ اِس طرح سپین میں مسلمانوں کی فتوحات کا راستہ کھُل گیا۔”

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *